چین، طالبان کے ساتھ معاہدے کرنے کی کوشش کرے گا، جوبائیڈن

غیر ملکی خبررساں ادار ’رائٹرز‘ کے مطابق چین کی جانب سے طالبان کو فنڈنگ سے متعلق سوال کے جواب میں جوبائیڈن نے کہا کہ ’چین کو طالبان کے ساتھ حقیقی مسئلہ ہے‘۔

0 3

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

واشنگٹن: امریکا کے صدر جوبائیڈن نے یقین ظاہر کیا ہے کہ چین، طالبان کے ساتھ معاہدے کرنے کی کوشش کرے گا۔

غیر ملکی خبررساں ادار ’رائٹرز‘ کے مطابق چین کی جانب سے طالبان کو فنڈنگ سے متعلق سوال کے جواب میں جوبائیڈن نے کہا کہ ’چین کو طالبان کے ساتھ حقیقی مسئلہ ہے‘۔

انہوں نے مزید کہا کہ ’اس لیے بیجنگ کی جانب سے طالبان کے ساتھ بعض امور میں معاہدے کی کوشش جاری ہے‘۔

امریکی صدر نے واضح کیا کہ ’انہیں یقین ہے کہ پاکستان، روس اور ایران بھی اسی طرح کریں گے، ان تمام کی جانب سے ایسی کوششیں جاری بھی ہیں‘۔

امریکا سمیت اس کے 7 اتحادی طالبان نے طالبان کو جواب دینے پر اتفاق کا اظہار کیا ہےاور واشنگٹن نے افغانستان کے ذخائر تک رسائی طالبان کی رسائی روک دی ہے۔

ان میں سے بیشتر نیو یارک فیڈرل ریزرو کے پاس ہیں تاکہ طالبان خواتین کے حقوق اور بین الاقوامی قوانین کا احترام سے متعلق اپنے وعدؤں پر قائم رہیں۔

دوسری جانب ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر چین، روس یا دیگر ممالک طالبان کو فنڈز فراہم کرتے ہیں تو اس کا زیادہ تر معاشی فائدہ ختم ہو جائے گا۔

چین، روس سمیت 20 بڑے ممالک پر مشتمل گروپ کی جانب سے افغانستان کے حوالے سے جی 20 اجلاس متوقع ہے جس کی صدارت اٹلی کرے گا۔

تاہم اس حوالے سے ان ممالک میں جزوی اختلاف کے باعث اجلاس کی حتمی تاریخ کے بارے میں آگاہ نہیں کیا گیا۔

چین کے وزیر خارجہ وانگ یی نے 29 اگست کو امریکی سیکریٹری اسٹیٹ سے کہا تھا کہ عالمی برادری طالبان کے ساتھ تعلقات قائم کرے اور ان کی ’مثبت انداز میں رہنمائی‘ کرے۔

چین نے باضابطہ طور پر طالبان کو افغانستان کے نئے حکمرانوں کے طور پر تسلیم نہیں کیا ہے لیکن وزیر خارجہ نے جولائی میں ملا برادر کی میزبانی کی جو اب نائب وزیر اعظم کے طور پر تعینات ہیں۔

انہوں نے کہا تھا کہ دنیا کو افغانستان کی رہنمائی اور مدد کرنی چاہیے کیونکہ یہ ایک نئی حکومت ہے۔

علاوہ ازیں امریکا کا کہنا تھا کہ وہ چاہتا ہے کہ پاکستان اور چین، افغانستان میں ‘کسی طرح کے سیاسی تصفیے’ کی راہ ہموار کرنے میں مدد کریں حالاکہ اس وقت طالبان ملک بھر میں مؤثر کنٹرول حاصل کر چکے ہیں۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان نیڈ پرائس نے نیوز بریفنگ کے دوران امریکا کے پاکستان سے مطالبے سے متعلق سوال پر کہا تھا کہ ‘امریکا چاہتا ہے کہ تمام پڑوسی ممالک افغانستان میں استحکام پیدا کرنے میں مدد کریں’۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Privacy & Cookies Policy