بھارت: سوشل میڈیا کمپنیاں ‘غیر قانونی’ پیغامات کے ذرائع 72 گھنٹے میں سامنے لانے کی پابند

ان کمپنیوں کو صارفین بالخصوص خواتین کی جانب سے قابل اعتراض مواد ہٹانے کے درخواست پر بھی جلد فیصلہ کرنا ہوگا۔

0 6

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

بھارتی حکومت نے فیس بک، واٹس ایپ اور ٹوئٹر سمیت سوشل میڈیا کمپنیوں کو پابند کیا ہے کہ وہ مبینہ غیر قانونی اور اشتعال انگیز پیغامات کے ذرائع 72 گھنٹے میں سامنے لائیں گی۔

ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق بھارت میں سوشل میڈیا کمپنیوں کو تحقیقاتی اور سائبر سیکیورٹی ایجنسیوں کی جانب سے پوچھے جانے پر 72 گھنٹے میں غیر قانونی اور اشتعال انگیز پیغامات کے ذرائع انہیں بتانے ہوں گے۔

ان کمپنیوں کو صارفین بالخصوص خواتین کی جانب سے قابل اعتراض مواد ہٹانے کے درخواست پر بھی جلد فیصلہ کرنا ہوگا۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ بھارتی حکومت کی طرف سے سوشل میڈیا کمپنیوں اور انٹرنیٹ پلیٹ فارمز کے حوالے سے رولز میں بڑی تبدیلیاں کردی گئی ہیں اور انہیں حاصل استثنیٰ کو ختم کردیا گیا ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Privacy & Cookies Policy