’یٹیوں کو عورت مارچ کرنے کا درس دینے کے بجائے بیٹوں کی بہتر تربیت کریں‘

ایک سوال کے جواب میں سارہ خان نے کہا کہ عورت ہی بچوں کی بہتر پرورش کی ذمہ دار ہوتی ہے، اس لیے خواتین کو بیٹیوں کو یہ درس نہیں دینا چاہیے کہ وہ ’عورت مارچ‘ کریں بلکہ وہ بیٹوں کو درس دیں کہ وہ خواتین کی عزت کریں۔

0 6

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

گزشتہ برس جولائی میں شادی کے بندھن میں بندھ جانے والی اداکارہ سارہ خان کا کہنا ہے کہ بچوں کی تربیت کرنا خواتین کا کام ہے اور وہ اپنی بیٹیوں کو ’عورت مارچ‘ کرنے کا درس دینے کے بجائے بیٹوں کی بہتر تربیت کریں۔

’دی کرنٹ‘ کے ساتھ بات کرتے ہوئے سارہ خان نے کہا کہ مرد و خواتین یکساں ہیں اور ان کا پہلے ہی رتبہ یا مرتبہ متعین کردیا گیا ہے، ان کے مرتبے یا رتبے کو اوپر نیچے کرنا درست نہیں۔

ایک سوال کے جواب میں سارہ خان نے کہا کہ عورت ہی بچوں کی بہتر پرورش کی ذمہ دار ہوتی ہے، اس لیے خواتین کو بیٹیوں کو یہ درس نہیں دینا چاہیے کہ وہ ’عورت مارچ‘ کریں بلکہ وہ بیٹوں کو درس دیں کہ وہ خواتین کی عزت کریں۔

اداکارہ نے مرد میزبان کو مثال دیتے ہوئے کہا کہ اگر ان کی اہلیہ اچھی نہیں ہوں گی تو وہ کیسے خوش رہیں گے؟

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

Comment moderation is enabled. Your comment may take some time to appear.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Privacy & Cookies Policy