غذر: چٹور کھڈ میں موجود پُل عوام کے لیے وبالِ جان بن گیا

اگر دیکھائے جائے تو اس پل کی مرمت کا کام غذر انتظامیہ نے کھبی کیا ہی نہیں ہے لیکن اس حالت میں بھی اس پُل پر گزرنے والے لوگوں کو ہر وقت پریشانی کا سامنا ہے۔

0 3

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

غذر (کامران علی عبرت، میڈیارپورٹر) ― ضلع غذر کے حلقہ نمبر ایک میں موجود چٹور کھنڈ اور دائین کو ملانے والی پُل کی کہانی بہت پرانی ہے۔ اس پُل کا افتتاح گلگت کے کمانڈر ایف سی این اے(ر) مارشل لاء ایڈمنسٹرٹر میجر جنرل پیرداد خان(تمغہ جرات) نے ستمبر1983 کو افتتاح کیا۔ اس پُل کی لمبائی علاقہ عمائدین کے مطابق 612 فٹ بتائی جاتی ہے لیکن اس وقت اس پُل کی حالت بہت ہی خراب ہے۔

اگر دیکھائے جائے تو اس پل کی مرمت کا کام غذر انتظامیہ نے کھبی کیا ہی نہیں ہے لیکن اس حالت میں بھی اس پُل پر گزرنے والے لوگوں کو ہر وقت پریشانی کا سامنا ہے۔

لوگوں کا کہنا ہے کہ اس پُل کے حوالے سے حکومتی اراکین نوٹس تو لیتے ہے مگر کوئی عمل درآمد کرنے اور کام کرنے کا نام بھی نہیں لیتے۔ حکام بالا بڑے بڑے دعویٰ تو کرتے ہیں مگر اس پُل کی مرمت کا کام نہیں کرتے ہیں۔

گاوں دائین آبادی کے لحاظ سے چار ہزار سے زیادہ آبادی پر مشتمل ہے۔ اس گاوں میں تقریباً 2800 سے زائد ووٹرز ہیں۔ لیکن افسوس اس گاوں کو نظرانداز کرنا عوام کے ساتھ زیادتی کے سوا اور کچھ نہیں ہے۔

عوام کے کا کہنا ہے کہ اس پُل پر وزنی قسم کا سامان لے جانا بلکل مشکل ہے، جس کی وجہ سے کبھی بھی مسائل درپیش آ سکتے ہیں۔ علاقہ کے لوگ اس جدید دور میں بھی اپنے کندھوں کا استعمال کرتے ہوئے اپنا سامان اپنے گھروں میں پہنچاتے ہیں۔ اتنی مجبوری کے ساتھ بھی عوام کو پریشانی کا سامنا ہے کہ کہی یہ پل آنے والے وقت میں بڑے حادثے کا سبب نہ بنے اس لیے گلگت، بلتستان اور ضلع غذر کے اعلیٰ حکام سے پُرزور گزارش ہے کہ اس مسئلہ کا نوٹس لے کر حل کیا جائے تاکہ عوام روز روز کی پریشیانی سے بچ سکے۔

مزید تفصیلات دیکھیں پاک ایشیا کے میڈیا رپورٹر "کامران علی عبرت” کی اس رپورٹ میں:

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Privacy & Cookies Policy