پارا چنار: روحانی پیشوا "میاں شاہ انور” کا مزار جل کھولا جائے، قبائلی عمائدین کا مطالبہ

پاراچنار میں پُرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قبائلی عمائدین اور بادشاہ انور غگ کمیٹی کے رہنماؤں سید شجاعت حسین میاں الخائری، سید صداقت حسین میاں، سید مفید حسین میاں، ملک عباس غلام اور ماہر حسن نے کہا کہ پاراچنار ہنگو اور اورکزئی سمیت مختلف علاقوں میں 45 روز تک دھرنے اور احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا گیا ہے۔ یاد رہے کہ احتجاج صرف روحانی پیشوا سید میر انور کے مزار کھولنے کے لیے کیا گیا تھا جو کہ بدامنی کے دوران بند کیا گیا تھا۔

3

پارا چنار: روحانی پیشوا "میاں شاہ انور” کا مزار جل کھولا جائے، قبائلی عمائدین کا مطالبہ

پارا چنار (اِلہام حُسین، میڈیا رپورٹر) ― ضلع کرم کے قبائلی عمائدین اور بادشاہ انور غگ کمیٹی کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ روحانی پیشوا میاں شاہ انور کا مزار جلد نا کھولا گیا تو دھرنوں اور احتجاج کا سلسلہ دوبارہ شرع کیا جائے گا۔

پاراچنار میں پُرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قبائلی عمائدین اور بادشاہ انور غگ کمیٹی کے رہنماؤں سید شجاعت حسین میاں الخائری، سید صداقت حسین میاں، سید مفید حسین میاں، ملک عباس غلام اور ماہر حسن نے کہا کہ پاراچنار ہنگو اور اورکزئی سمیت مختلف علاقوں میں 45 روز تک دھرنے اور احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا گیا ہے۔ یاد رہے کہ احتجاج صرف روحانی پیشوا سید میر انور کے مزار کھولنے کے لیے کیا گیا تھا جو کہ بدامنی کے دوران بند کیا گیا تھا۔

پاک ایشیا ویب چینل کے مطابق احتجاج ذمہ دار افراد کی جانب سے مزار کھولنے کے وعدوں کے بعد ختم کیا گیا تھا۔ تاہم 2 ماہ گزرنے کے باوجود حکومت نے اپنا وعدہ پورا نہیں کیا جس کی وجہ سے احتجاجی مظاہرہ کے سربراہان کا کہنا ہے کہ وہ وعدہ پر عمل نا کیے جانے کی وجہ سے دوبارہ احتجاج کرنے پر مجبور ہیں۔ رہنماوں نے مطالبہ کیا ہے کہ اورکزئی کے صدر مقام کلایہ میں روحانی پیشوا میاں شاہ انور بزرگوار کا مزار زائرین اور مرمت کیلئے جلد کھولا جائے اور انہیں دوبارہ احتجاج پر مجبور نہ کیا جائے۔

مزید تفصیلات دیکھیں پاک ایشیا کے میڈیا رپورٹر "اِلہام حُسین” کی اس رپورٹ میں:

تبصرے