ملتان پولیس کو لینڈکروزر چلاتے پانچ سالہ بچے کی تلاش

آج کل سوشل میڈیا پر جو ویڈیو وائرل ہورہی ہے وہ ایک کم سن بچے کی گاڑی چلانے کی ویڈیو ہے جس پر اب تک حکام کی جانب سے کوئی کارروائی عمل میں نہیں آئی۔

0 7

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

سوشل میڈیا پر آئے روز مختلف حوالے سے ویڈیوز وائرل ہوتی رہتی ہیں جس پر کبھی کبھار حکام بالا کی جانب سے نوٹس لیا جاتا تاہم کبھی ان پر کوئی توجہ نہیں دی جاتی۔

آج کل سوشل میڈیا پر جو ویڈیو وائرل ہورہی ہے وہ ایک کم سن بچے کی گاڑی چلانے کی ویڈیو ہے جس پر اب تک حکام کی جانب سے کوئی کارروائی عمل میں نہیں آئی۔

صوبہ پنجاب کے شہر ملتان میں ایک بچے کی ویڈیو وائرل ہوئی ہے جس میں وہ ایک سیاہ رنگ کی لینڈکروزر گاڑی چلاتے ہوئے دیکھا گیا۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ بچہ جس کی عمر 5 یا 6 سال سے بھی کم معلوم ہوتی ہے وہ شہر کی ایک مصروف شاہ بوسن روڈ پر لینڈکروزر کی ڈرائیونگ سیٹ پر بیٹھ کر اسے چلا رہا ہے جبکہ اس کے برابر والی نشست خالی ہے۔

تاہم گاڑی کی پچھلی نشستوں پر کوئی موجود تھا یا نہیں اس بارے میں ویڈیو سے واضح نہیں ہوسکا کیونکہ لینڈکروزر کی پچھلی نشستوں کی کھڑکیوں پر سیاہ گلاس لگے ہوئے تھے۔

اس ویڈیو کے سامنے آتے ہی اسے بڑی تعداد میں شیئر کیا جانے لگا تاہم اس طرح لوگوں کی زندگیوں کو خطرے میں ڈالنے پر ابھی تک گاڑی کے مالک یا بچے کے والدین کے خلاف کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی جاسکی۔

دوسری جانب چیف ٹریفک افسر (سی ٹی او) محمد ظفر بزدار کی جانب سے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے گاڑی اور اس کے مالک کی تلاش کے لیے ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں۔

اس حوالے سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ شہریوں سے گزارش ہے کہ اگر کسی کے پاس اس گاڑی کے مالک کے بارے میں معلومات ہوں تو وہ پولیس کی ہیلپ لائن پر اطلاع دیں۔

وہی ترجمان سٹی پولیس عدنان کا کہنا تھا کہ تمام سیکٹر انچارجز اور ٹریفک وارڈنز کو گاڑی سے متعلق آگاہ کردیا گیا ہے جبکہ سی سی ٹی وی کیمروں سے بھی جانچ کی جارہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکام کو ہدایت کی گئی ہے کہ گاڑی جہاں بھی نظر آئے اس کے خلاف کارروائی کریں جبکہ سی ٹی او کی ہدایت پر معاملے پر مقدمہ بھی درج کیاجائے گا۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More

Privacy & Cookies Policy