fbpx
پاکستان عدالت

رانا ثناء اللہ 14 روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل

لاہور عدالت کے حکم پر رانا ثناءاللہ کو کیمپ جیل منتقل کر دیا گیا

 انسداد منشیات فورس کی جانب سے رانا ثناءاللہ کو جوڈیشل مجسٹریٹ احمد وقاص کی عدالت کے روبرو پیش کیا گیا۔ اے این ایف اور دیگر پراسکیوٹر بھی کمرہ عدالت میں موجود تھے۔ عدالت سے ریمانڈ کی استدعا کی گئی جسے منظور کرلیا گیا۔

رانا ثنا اللہ کی پیشی کے موقع پر عدالت کے باہر پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی، پولیس حکام نے ضلع کچہری کے باہر خاردار تاریں اور کنیٹرز بھی لگائے۔ اس موقع پر لیگی وکلا اور کارکنوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔ رانا ثنا اللہ پر ڈرگ ڈیلرز اور کالعدم تنظیموں سے روابط کا الزام ہے۔

اینٹی نارکوٹکس کی جانب سے دائر ایف آئی آر کے متن میں کہا گیا ہے کہ اینٹی نارکوٹکس نے رانا ثنا اللہ کی گاڑی سے 21 کلو سے زائد منشیات برآمد کی، برآمد ہونے والی منشیات میں 15 کلو ہیروئن بھی شامل ہے۔

مقدمے میں منشیات ایکٹ کی 9 سی، 15، 17 اور دیگر دفعات شامل ہیں۔ ایف آئی آر میں کہا گیا کہ مخبر نے اطلاع دی راناثنااللہ کی گاڑی میں منشیات ہے، راناثنااللہ کی گاڑی کو روکنے کیلئے حکمت عملی مرتب کی گئی، موٹر وے سے آنیوالی تمام گاڑیوں کی چیکنگ کی گئی۔

راناثنا اللہ کی گاڑی کو روکا تو ان کے ساتھیوں نے ہاتھا پائی کی، اے این ایف ٹیم نے راناثنااللہ سے منشیات سے متعلق دریافت کیا، راناثنااللہ نے سیٹ کے پیچھے رکھے سوٹ کیس کی نشاندہی کی، راناثنااللہ نے سوٹ کیس میں موجود لفافے میں ہیروئن کی نشاندہی کی۔

نارکوٹکس ایکٹ کے تحت 100 گرام تک منشیات برآمد ہونے پر 2 سال قید، ایک ہزار گرام تک 7 سال قید جبکہ اس سے زیادہ پر سزائے موت، عمر قید یا 10 سال تک جرمانہ کی سزا ہو سکتی ہے۔

 یاد رہے گزشتہ روز انسداد منشیات فورس  نے گاڑی سے منشیات برآمد ہونے پر مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر اور رکن قومی اسمبلی رانا ثنا اللہ کو گرفتار کیا تھا۔ وہ لاہور میں اجلاس کی صدارت کیلئے فیصل آباد سے آرہے تھے۔

 ترجمان کے مطابق رانا ثنااللہ کو بہت سے شواہد کی روشنی میں گرفتا کیا گیا، اس حوالے سے تحقیقات بھی جلد منظر عام پر لائی جائیں گی۔ رانا ثنا کی گرفتاری سے قبل اے این ایف نے چند منشیات فروشوں کو گرفتار کیا جس کے بعد رانا ثنااللہ کو حراست میں لیا گیا۔


About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.