fbpx
پاکستان نمایاں

اگر بھارت نے پلوامہ واقعے کے حوالے سے ‘قابل عمل انٹیلی جنس’ فراہم کی تو ‘ہم فوری کارروائی کریں گے:عمران خان

وزیراعظم عمران خان نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے بیان کا جواب دیتے ہوئے انہیں یقین دلایا ہے کہ وہ اپنے کہے ہوئے الفاظ پر قائم رہیں گے اور اگر بھارت نے پلوامہ واقعے کے حوالے سے ‘قابل عمل انٹیلی جنس’ فراہم کی تو ‘ہم فوری کارروائی کریں گے’۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری ایک بیان کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ مودی کو چاہیے کہ ‘امن کو ایک موقع دیں’۔

عمران خان نے کہا کہ ‘دسمبر 2015 میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سےملاقات میں ہم نے اتفاق کیا تھا کہ ہمارے خطے سے غربت کو ترجیحی بنیادوں پر ختم کریں گے اور کسی دہشت گردی کے واقعے کو امن عمل کو سبوتاژ کرنے کی اجازت نہیں دیں گے تاہم پلوامہ سے بہت پہلے ستمبر 2018 میں کوششوں کو ڈیل ریل کردیا گیا’۔

وزیراعظم نے اپنے بیان میں کہا کہ ‘بھارت میں انتخابات کے باعث بدقسمتی سے اب امن بدستور خطرے میں ہے’۔

عمران خان نے خطے میں امن و سلامتی اور استحکام کے لیے پاکستان کے عزم اور خواہش کو دہرایا۔

قبل ازیں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے ایک بیان میں عمران خان سے کہا تھا کہ کہ اپنے الفاظ پر ایک پٹھان کی طرح قائم رہیں اور آپس میں ایک دوسرے سے لڑنے کے بجائے بھارت کے ساتھ مل کر غربت اور ناخواندگی کے خلاف لڑیں۔

بھارتی ریاست راجستھان میں عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ پاکستان میں ایک نئے وزیراعظم ہیں اور میں نے ملاقات میں انہیں کہا تھا کہ پاکستان اور بھارت کئی مرتبہ لڑے اس سے آپ کے ملک میں کوئی بہتری نہیں آئی تو کیوں نہ ہم غربت اور ناخواندگی کے خلاف مل کر لڑتےہیں۔

نریندر مودی نے بھارتی سپریم کورٹ کی جانب سے پلوامہ واقعے کے بعد کشمیریوں پر ہونے والی متعصبانہ کارروائیوں کو روکنے کے حکم پر مثبت جواب دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ جب ہندو یاتریوں پر حملہ ہوا تھا تو کشمیری مسلمانوں اور وادی کے لوگوں نے خون کے عطیات دیے تھے اور ہر ہندوستانی کا فرض ہے کہ وہ کشمیریوں کا تحفظ کرے۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.