ہماری ٹیم سے ملیں!

پاک ایشیاء اُردو زُبان میں پاکستان کا پہلا ویب چینل ہے جو اپنی رپورٹنگ اور دِل چسپ پروگرامز کے حوالے سے مُلک کے عام و خاص حلقوں میں مُنفرد شناخت رکھتا ہے۔

پاک ایشیاء یوں تو تمام اہم موضوعات کے ساتھ ساتھ عالمی و علاقائی حالات و واقعات کا احاطہ کرتا ہے لیکن ایسے حالات و واقعات کو خاص طور پر منظرِ عام پر لاتا ہے جنیہں پاکستان کا الیکڑانک و پرِنٹ میڈیا خوف، ڈر یا دباؤ کے تحت چھپا جاتا ہے۔ اس لیے پاک ایشیاء کی ہر رپورٹ، نیوز سٹوری اور خبر ملک اور بیرون ملک پھیلے پاک ایشیاء کے نمائندگان دن رات جانفشانی سے محنت کر کے اس بات کے پیشِ نظر   ایسے واقعات کو خاص طور پر منظر عام پر لاتے ہیں۔پاک ایشیاء ہر خبر ترتیب دیتے وقت یہ بات خاص طور پر اپنے پیش نظر رکھتا ہے کہ قارئین کو اپنے مشن کے تحت ہر قسم کے ڈر،خوف، یا دباؤ کو بالائے طاق رکھتے ہوئے صرف اور صرف حقائق بتائے جائیں۔ اس کے علاوہ پاک ایشیاء کی ہر رپورٹ اور سٹوری منفرد اور دلچسپ بھی ہو۔ ہمارا یقین ہے کہ جو انکشافات اور سچائیاںپاک ایشیاء پیش کرتا ہے  ایسی مستند رپورٹز اور حقائق آپ نے پہلے کبھی نہیں پڑھیں ہوں گے۔

پاک ایشیاءنے جس طرح اپنے آغاز سے ہی حقائق سے آگاہی کیلئے تحقیق اور جستجو کو اپنا شعار بنا ئے رکھا ہے، انشاء اللہ آئندہ بھی تمام موضوعات پر مستند تحقیقاتی رپورٹوں کے ذریعے قارئین کو حقائق سے باخبر کرتا رہے گا۔


ہماری ٹیم سے ملیں!


سید آصف جاہ

چیئرمین

پاک ایشیاء کے چیئرمین، سید آصف جاہ جعفری کا شمار ملک کے ان معروف تحقیقی صحافیوں میں ہوتا ہے جن کی شہرت اور پہچان کے کئی حوالے ہیں۔  ان کی کُتب ملک کے عام و خاص، مقتدر اور پالیسی ساز حلقوں میں پڑھی جاتی ہیں۔ شخصیات پر لکھنا پسندیدہ موضوع ہے اور وہ ان میں ایک اتھارٹی کا درجہ رکھتے ہیں۔ اس موضوع پر ان کی تحقیقی کُتب نے اندرون ملک کے علاوہ بیرون ملک بھی تہلکہ مچا رکھا ہے۔ شخصیت نگاری کے علاوہ مختلف موضوعات پر ریسرچ کے حوالے سے بھی ان کی ایک پہچان ہے۔ قومی و مذہبی موضوعات پر ان کی لکھی ہوئی کتابوں کو بھی بڑی اہمیت دی جاتی ہے۔اُن کی کئی کتابیں بیسٹ سیلر ہیں۔


سید عالی جاہ

چیف ایگزیکٹو

آپ ناصرف بطور چیف ایگزیکٹو ادارہ کے انتظامی امور کو سنبھال رہے ہیں بلکہ تحقیقی صحافت میں دِل چسپی کے باعث بطور صحافی بھی اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں۔  تحقیقی صحافت  میں حکومت، سیاست، اسٹیبلشمنٹ، مذہب، جہاد، دہشت گردی، فوج اور انٹیلی جنس ایجنسیاں ان کے پسندیدہ موضوعات ہیں۔ تحقیق کے علاوہ مختلف موضوعات پر ریسرچ اور ترجمہ نگاری بھی ان کا پسندیدہ موضوع ہے۔وہ ایسی سچائیوں کو بے نقاب کرنے کے حوالے سے بھی مشہور ہیں جن پر ڈر اور خوف کی مصلحتوں نے پردہ ڈالا ہوا ہے۔ ان کی شخصیت، خیالات اور نظریات ہر قسم کی جماعتی و گروہی وابستگی سے پاک ہے۔ وہ وقت کے سلگتے ہوئے موضوعات پر بہت سی کُتب تحریر کرنا چاہتے ہیں مگر وقت کی کمی کے باعث فی الحال قلم کاری کا فیصلہ انہوں نے وقت کے سپرد کر رکھا ہے۔