پاکستان سیاست

کسی کی سفارش نہیں چلے گی، سب کا بلا امتیاز احتساب ہو گا: پرائم منسٹر

 وزیرِاعظم عمران خان نے کہا ہے کہ احتساب کا عمل شروع ہونے پر کہا جائے گا کہ جمہوریت کو خطرہ لاحق ہو گیا لیکن اپنا ہو یا پرایا، سب کا احتساب بلا امتیاز ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ سابق حکمرانوں نے غیر ملکی دوروں پر اربوں روپے خرچ کیے، ماضی میں حکمران بُلٹ پروف گاڑیاں استعمال کرتے تھے، پاکستان کو فائدہ ہوا تو پھر غیر ملکی دورہ کروں گا۔

عمران خان نے اس موقع پر وزیرِاعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی کھل کر حمایت کی اور کہا کہ وہ دلیر آدمی ہیں، ہمیں 3 ماہ کا وقت دیں، پھر تنقید کی جائے، تین ماہ کے دوران گڈ گورننس میں واضح تبدیلی آئے گی۔ تاہم انہوں نے کہا کہ تنقید ضرور کریں، میں ان چیزوں سے گھبراتا نہیں کیونکہ اس سے مسائل کے حل میں مدد ملتی ہے۔

وزیرِاعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ انہوں نے عوام کو زحمت سے بچانے کیلئے بنی گالہ تک ہیلی کاپٹر سے سفر کیا جبکہ ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ڈی پی او پاکپتن سے متعلق حقائق سپریم کورٹ میں آ جائیں گے۔

وزیرِاعظم نے بتایا کہ گردشی قرضے 1200 ارب روپے تک پہنچ گئے ہیں، ہم اوورسیز پاکستانیوں سے پیسہ اکٹھا کرنے کیلئے مہم شروع کریں گے۔

ذرائع کے مطابق صحافیوں سے ملاقات کے دوران فرانس کے صدر کا دو مرتبہ فون آیا لیکن وزیرِاعظم عمران خان نے کہا کہ ابھی مصروف ہوں، بعد میں بات کروں گا۔


اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کر یں