پاکستان عدالت

ایون فیلڈ فیصلے کے خلاف درخواست پر نیب کو جواب جمع کرانے کا آخری موقع

لاہور ہائیکورٹ نے قومی احتساب بیورو (نیب) کو ایون فیلڈ ریفرنس میں شریف خاندان کو سزا دیے جانے کے خلاف درخواست پر بدھ (29 اگست) تک جواب جمع کرانے کا حکم دے دیا۔

جسٹس شاہد وحید کی زیرِ صدارت تین رکنی بینچ نے مذکورہ درخواست پر روزانہ کی بنیاد پر سماعت کرنے کا حکم دیا، بینچ میں جسٹس عاطر محمود اور شاہد جمیل خان بھی شامل ہیں۔

دورانِ سماعت عدالت نے استفسار کیا کہ نیب کی طرف سے کوئی وکیل عدالت میں موجود ہے؟جس پر وکیل وفاقی حکومت نے جواب دیا کہ نیب کے وکیل سے ابھی رابطہ کر لیتے ہیں۔

عدالت نے ریمارکس دیے کہ نیب کو جواب داخل کرانے کا آخری موقع دیا جا رہا ہے۔

عدالت نے آئندہ سماعت میں نیب پراسیکیوٹر کو عدالت میں طلب کرتے ہوئے جواب داخل کرانے کا حکم دے دیا۔

سماعت 29 اگست تک ملتوی کرنے سے قبل عدالت نے کیس میں فریق بننے کے لیے 3 مختلف وکلا کی دائر کی گئیں درخواستیں مسترد کردیں۔

خیال رہے کہ لائرز فاؤنڈیشن فار جسٹس کے قانون دان اے کے ڈوگر کی جانب سے ایون فیلڈ ریفرنس فیصلے کے خلاف درخواست دائر کی گئی تھی، جس میں مؤقف اپنایا تھا کہ نیب کا قانون 18ویں ترمیم کے بعد ختم ہو چکا ہے۔

درخواست میں مؤقف اپنایا گیا تھا کہ ملک کے تین مرتبہ وزیراعظم رہنے والے شخص کو اس قانون کے تحت سزا دی گئی جو کہ ختم ہو چکا ہے۔

درخواست گزار کا کہنا تھا کہ نواز شریف، مریم نواز، کیپٹن صفدر کو مردہ قانون کے تحت سزا دی گئی جو غیر قانونی ہے، لہٰذا عدالت اس سزا کو کالعدم قرار دے۔


اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں

WordPress Video Lightbox Plugin