fbpx
دنیا طرز زندگی فیشن

کائنات کی سب سے خوبصورت خاتون کا اعزاز جنوبی افریقہ کی ڈیمی لے نیلپیٹر نے جیت لیا

امریکی شہر لاس ویگاس میں 2017 کے مس یونیورس مقابلے میں جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والی دوشیزہ ڈیمی لے نیلپیٹر نے متعدد ممالک کی حسیناؤں کو پیچھے چھوڑتے ہوئے کائنات کی سب سے خوبصورت خاتون ہونے کا اعزاز اپنے نام کر لیا۔

اس مقابلے میں دنیا بھر سے تعلق رکھنے والی 92 خواتین نے حصہ لیا، جبکہ کمبوڈیا، لاؤس اور نیپال جیسے ممالک اس مقابلے کا پہلی بار حصہ بنے۔

ڈیمی لی 66 ویں مس یونیورس منتخب ہوئی ہیں۔ اس مقابلے کے فائنل میں جنوبی افریقہ، جمیکا اور کولمبیا کی امیداوار پہنچی تھیں۔

مقابلے میں مس کولمبیا دوسرے جبکہ مس جمیکا تیسرے اعزاز کی حقدار رہیں۔

ڈیمی لے نیلپیٹر جنوبی افریقہ کی دوسری خاتون ہیں جنہوں نے مس یونیورس کا اعزاز جیتا۔

مس یونیورس
تاج حاصل کرنے کے بعد ديگر ممالک کی امیدواروں نے جنوبی افریقہ کی فاتح کو گھیر لیا

22 سالہ ڈیمی لیہہ نیل پیٹرز کو اس اعزاز کے ساتھ ساتھ ایک سال کا معاوضہ اور نیویارک شہر میں ایک شاندار اپارٹمنٹ کے ساتھ دیگر انعامات سے بھی نوازا گیا۔

مقابلے کے دوران جب ڈیمی سے سوال کیا گیا کہ خواتین کو اپنے دفتر میں سب سے زیادہ کس مسئلے کا سامنا کرنا پڑتا ہے، تو اس پر انہوں نے کہا کہ خواتین کو مردوں کے برابر معاوضہ نہیں دیا جاتا۔

انہوں نے کہا کہ ’کچھ جگہوں پر خواتین کو مردوں کو ملنے والے معاوضے کا صرف 75 فیصد دیا جاتا ہے، پھر چاہے وہ دونوں ایک سا کام ہی کررہے ہوں اور مجھے لگتا ہے کہ یہ صحیح نہیں ہے‘۔

اس سال کے شو کی میزبانی بھی اسٹیو ہاروے نے کی، واضح رہے کہ 2015 میں انہوں نے مس یونیورس کا خطاب ‘غلطی سے’ مِس فلپائن کی جگہ مس کولمبیا کو دے دیا تھا۔

22 سالہ ڈیمی لے نے نارتھ ویسٹ یونیورسٹی سے بزنس ایڈمنسٹریشن میں ڈگری حاصل کر رکھی ہے۔

مس یونیورس کی ویب سائٹ کے مطابق ڈیمی لے کی سب سے بڑی تحریک ان کی سوتیلی بہن ہیں جو معذور ہیں۔

اپنے فارغ اوقات میں ڈیمی لی ایسے پروگراموں میں شرکت کرتی ہیں جو خواتین کو اپنا دفاع کرنے کا ہنر سکھاتے ہیں۔.

ڈیمی لے نے ایک انٹرویو میں بتایا تھا کہ ایک بار جب کسی نے انھیں بندوق کی نال پر دھمکی دی تھی اس کے بعد سے وہ ذاتی دفاع کی اہمیت کے بارے میں زیادہ ہوشیار ہو گئی تھیں۔

This slideshow requires JavaScript.

حسینۂ کائنات کے مقابلے کے آخری مراحل میں جس سوال پر انھیں اس تاج کا حقدار قرار دیا گیا وہ یہ تھا کہ آپ کو اپنی کس خاصیت پر فخر ہے اور آپ مس یونیورس کے طور پر اپنی اس خصوصیت کا کیسے استعمال کریں گی؟

اس کے جواب میں ڈیمی لے نے کہا؛ ‘مس یونیورس کے طور پر آپ ذاتی طور پر جو بھی ہوں آپ کو خود پر اعتماد ہونا چاہیے۔ مس یونیورس ایک ایسی خاتون ہوتی ہے جس نے خوف کی متعدد حدود پار کی ہوتی ہیں اور اس کے ذریعے وہ دوسری خواتین کو ان کے خوف سے نکالنے کی اہلیت رکھتی ہیں، اور میں بالکل ویسی ہی ہوں۔’

ہندوستان کی 21 سالہ شردھا ششی دھر نے اس مقابلے میں حصہ لیا لیکن وہ آخری 16 حسیناؤں میں منتخب نہ ہو سکیں۔


اس خبر کے بارئے میں کمنٹ کے ذریعہ اپنی رائے کا اظہار کریں
Tags




From Google