fbpx
پاکستان سیاست

تفصیلی فیصلے میں دیکھا جائے گا کہ عدالت نے حکومت کو کیا ہدایات دی ہیں،فردوس عاشق اعوان

 فردوس عاشق اعوان کا کہنا ہے کہ نواز شریف کے بیرون ملک جانے کے حوالے سے لاہور ہائی کورٹ کا تفصیلی فیصلہ آنے کے بعد حکومت آئندہ کا لائحہ عمل تیار کرے گی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ حکومت عدالتوں کا احترام کرتی ہے اور وزیر اعظم پاکستان نے عدالتوں کو با اختیار بنانے کے لیے جدوجہد کی ہے’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی غیر مشروط اجازت دینے کے معاملے پر لاہور ہائی کورٹ نے دونوں فریقین کے موقف کو سنا اور انہیں مل بیٹھ کر لائحہ عمل تیار کرنے کا کہا تھا’۔

انہوں نے کہا کہ ‘حکومت کا موقف تھا کہ نواز شریف کو عمران خان یا حکومت کی خواہشات پر سزا نہیں دی گئی تھی بلکہ انہیں عدالتوں نے سزا دی تھی’۔

نواز شریف کے لیے لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے سنائے گئے آج کے فیصلے کے حوالے سے سوال کے جواب میں فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ ‘حکومت تحریری فیصلے کے آنے کے بعد فیصلہ کرے گی کہ اسے چیلنج کرنا ہے یا نہیں’۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘مصدقہ فیصلے میں دیکھا جائے گا کہ عدالت نے حکومت کو کیا ہدایات دی ہیں اور ہماری قانونی ٹیمیں اس کا جائزہ لیں گی’۔

انہوں نے کہا کہ ‘حکومت کا بیانیہ کسی کی ذات یا سیاست پر مبنی نہیں تھا، ہماری قانونی ٹیم نے جو مسودہ تیار کیا، اس پر ان کا حق تھا اور انہوں نے اسے چیلنج کیا’۔

بعد ازاں انہوں نے اٹارنی جنرل انور منصور خان کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ‘نوازشریف کا انسانی اور قانونی مسئلہ ہے اسے سیاسی نہ بنایا جائے’۔

انہوں نے کہا کہ ‘حکومت نے نوازشریف کو میڈیکل بورڈ کی سہولت فراہم کی، اور ان کی صحت پر ہر مرحلے پر آسانی فراہم کی مگر تب بھی حکومت کی نیت پر بے بنیاد شک کیا گیا اور انتقام پسندی کا تاثر دیا گیا ہے’۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نوازشریف کی صحت کا معاملہ کابینہ میں لے کر گئی، افسوس اس بات کا ہے کہ انڈیمنٹی بانڈ پر واویلا کیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘شریف خاندان نے ہمیشہ اپنے وعدوں کی خلاف ورزی کی ہے، ماضی میں شریف خاندان اپنے کیے گئے معاہدوں کو جھٹلاتا رہا ہے’۔

معاون خصوصی نے کہا کہ حکومت کا موقف تھا کہ نوازشریف کی صحت دیکھتے ہوئے انہیں فوراً جانے دیا جائے، شریف خاندان نے حکومت کے جذبہ خیر سگالی کی تعریف کی بجائے الزام تراشی شروع کردی’۔

فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ہمارے سیاسی حریفوں نے حکومت کی خیر سگالی کو نہیں سمجھا، جمہوری روایات کے مطابق سیاسی جماعتیں ایک دوسرے سے سیاسی پنجہ آزمائی کرتی ہیں ،سیاسی حریفوں کے منفی ردعمل پر افسوس ہے’۔


About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google