fbpx
پاکستان دہشتگردی

کوئٹہ ایک مرتبہ پھر دہشت گردی کی زد میں ، کچلاک کی مسجد میں دھماکہ، 4 نمازی شہید

 کوئٹہ کے نواحی علاقے کچلاک میں مسجد میں دھماکہ ہوا جس میں 4 افراد شہید جبکہ 23 زخمی ہوگئے۔

 دھماکا خیز مواد مسجد کے اندر نصب کیا گیا تھا دہشتگردی  کے واقعے کی اطلاع ملتے ہی قانون نافذ کرنے والے ادارے اور ریسکیو ٹیمیں  فوری طور پر موقع پر پہنچ گئیں۔

سیکیورٹی فورسز نے موقع پر پہنچتے ہی علاقے کو سیل کر دیا جبکہ ایمبولینسز کی مدد سے  واقعے میں جاں بحق افراد کی لاشوں اور زخمیوں کو ہسپتال منتقل کیا گیا۔

قانون نافذ کرنے والے اداروں نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے۔

پولیس کے مطابق ابتدائی طور پر دھماکے کی نوعیت کا نہیں بتا سکتے، دھماکا مسجد کے ممبر کے عین قریب ہوا۔ علاقے اور مسجد میں سیکیورٹی کے حوالے سے کوئی خاص انتظامات نہیں تھے۔

حکومت بلوچستان کی جانب سے بم دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے قیمتی جانی نقصان پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ آئی جی پولیس کو واقعہ کے تمام پہلوؤں اور محرکات کا جائزہ لے کر 48 گھنٹے میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت جاری کر دی گئی ہے۔

ترجمان صوبائی حکومت کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ زخمیوں کو علاج معالجہ کی بہترین سہولتوں کی فراہمی یقینی بنائی جا رہی ہے۔ نمازیوں کو دہشت گردی کا نشانہ بنانا انتہائی مکروہ اور قابل مذمت فعل ہے، واقعہ میں ملوث عناصر کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ مساجد، مدارس اور عبادت گاہوں کے سیکیورٹی پلان کا ازنو جائزہ لے کر اسے مزید موثر بنایا جائے گا۔
جاں بحق افراد کی شناخت محمد خان، مسجد کے پیش امام حافظ احمد اللہ، حاجی رحیم گل اور حاجی میر احمد کے نام سے ہوئی ہے۔
ڈی آئی جی کوئٹہ کا میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ ہماری اب تک کی اطلاع کے مطابق دہشتگردی واقعے میں 4 لوگ شہید ہوئے جبکہ 23 زخمی ہیں جن میں سے 4 ک حالت تشویشناک ہے۔انہوں نے بتایا کہ دہشتگردی کیلئے مسجد کے مہراب کے نزدیک 2 سے 3 کلو دھماکا خیز مواد استعمال کیا گیا۔

ادھر وزیراعظم عمران خان اور صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کوئٹہ دھماکے کی شدید مذمت کرتے ہوئے قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ صدر مملکت اور وزیراعظم نے شہدا کے بلندی درجات اور اہلخانہ کے لئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔


About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google