fbpx
پاکستان سیاست

نیب کی زیر حراست دو وعدہ معاف گواہوں نے شہباز شریف اور ان کے بیٹوں کے لیئے منی لانڈرنگ کرنے کا اعتراف کر لیا

نیب  کے مطابق ملزمان آفتاب محمود اور شاہد رفیق کو ضلع کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ ذوالفقار باری کے روبرو پیش کیا گیا جہاں انہوں نے شہباز شریف فیملی کے خلاف اپنے بیانات قلمبند کرائے۔

وعدہ معاف گواہوں نے جوڈیشل مجسریٹ لاہور کے سامنے اپنے بیانات ریکارڈ کرائے۔

انہوں نے اعتراف کیا کہ شہباز شریف اور ان کے بیٹوں کی ایما پر پاکستان میں 24 لاکھ ڈالر سے زائد رقم ٹی ٹی کے ذریعے ٹرانسفر کی گئی۔

واضح رہے کہ حمزہ شہباز اور ان کے بھائی سلمان شہباز کے خلاف مشتاق چینی پہلے ہی وعدہ معاف گواہ بن چکے ہیں۔

نیب نے آفتاب محمود کو گرفتار کرتے وقت انہیں شہباز فیملی کا فرنٹ مین قرار دیا تھا۔

آفتاب محمود نے اقرار کیا کہ اس نے برطانیہ میں عثمان انٹرنیشنل نامی کمپنی سے رقوم شریف فیملی کو منتقل کیں۔

زیر حراست ملزم کا کہنا تھا کہ ’جعلی شناخت کے ذریعے حمزہ شہباز، سلمان شہباز، نصرت شہباز اور رابعہ عمران علی کے بینک اکاؤنٹس میں ٹی ٹی کے ذریعے رقوم منتقل کی گئیں‘۔

علاوہ ازیں آفتاب محمود نے اعتراف کیا کہ وہ اپنے کزن شاہد رفیق کے ساتھ مل کر ٹی ٹیز کی مد میں رقم موصول کرتا تھا۔

اعترافی بیان میں آفتاب محمود نے بتایا کہ برطانیہ کی دیگر کمپنیوں سے بھی شریف فیملیز کو بھاری رقوم منتقل کیں تاہم حمزہ شہباز اور سلمان شہباز کو بارگلے اور ایچ ایس بی سی بینک سے بھی رقوم منتقل کی گئیں۔

نیب سے جاری دستاویزات کے مطابق ٹی ٹی کے ذریعے رقوم کی منتقلی کالے دھند کو سفید کرنا تھا جس سے فائدہ حاصل کرنے والے افراد میں حمزہ شہباز، سلمان شہباز، نصرت شہباز اور رابعہ عمران علی شامل تھے۔

نیب کے مطابق دوسرے وعدہ معاف گواہ شاہد رفیق نے اپنے اعترافی بیان میں کہا کہ ’میں سلمان شہباز کے دفتر سے رقوم لے کر بیرون ملک منتقل کرتا تھا‘۔

شاہد رفیق نے اقرار کیا کہ ’وہ اپنے کزن آفتاب محمود کے ساتھ مل کر جعلی شناخت کے ذریعے رقوم کی منتقلی کرتا تھا‘۔

انہوں نے بتایا کہ ’میرے پاس میسرز زارکو ایکسچینج اور ٹرپل اے کی فرنچائز تھیں جس سے رقوم منتقل کی جاتی تھیں‘۔

خیال رہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے نائب صدر حمزہ شہباز نیب کی حراست میں ہیں جنہیں منی لانڈرنگ اور آمدن سے زائد اثاثوں سے متعلق مقدمات میں 11 جون کو گرفتار کیا گیا تھا۔

لاہور کی احتساب عدالت نے منی لانڈرنگ اور آمدن سے زائد اثاثہ جات کیس میں گرفتار مسلم لیگ (ن) کے نائب صدر حمزہ شہباز کے جسمانی ریمانڈ میں 11 روز کی توسیع کردی ہے۔

یاد رہے کہ حمزہ شہباز کا 59 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہوچکا ہے، 3 اگست کو ان کے جسمانی ریمانڈ میں 7 روز کی توسیع کر دی گئی تھی اور آج ان کے جسمانی ریمانڈ میں مزید 11 روز کی توسیع کردی گئی ہے۔


About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google