fbpx
پاکستان معیشت

چھوٹے دکانداروں کے لئے فکس ٹیکس سکیم متعارف

حکومت نے ٹیکس اسکیم کے تحت تاجروں کے لیے بزنس لائسنس، چھوٹے دکانداروں کے لیے آسان ریٹرن فارم اور دیگر اسکیمز کا مسودہ جاری کردیا۔

ایف بی آر کے مطابق چھوٹے دکانداروں کے لیے فکسڈ ٹیکس اسکیم بھی مسودے کا حصہ ہے۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ تمام تاجر 30 ستمبر 2019 تک اپنے ٹیکس ریٹرن مجوزہ اسکیم کے تحت جمع کرانے کے پابند ہوں گے۔

علاوہ ازیں مذکورہ اسکیم 5 کروڑ سالانہ ٹرن اوور والے تاجروں کے لیے ہوگی اور اسکیم کے تحت تاجر گذشتہ 5 برس کے ٹیکس ریٹرن جمع کراسکیں گے۔

ایف بی آر کے مطابق 5 کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کرنے والے تاجر اسکیم کے اہل ہوں گے تاہم 10 کروڑ روپے کے اثاثہ جات رکھنے والے تاجر اسکیم سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔

بتایا گیا کہ اسکیم کے تحت تاجروں کو سالانہ 10 فیصد اضافی آمدن ظاہر کرنا ہوگی اور اسکیم کے تحت تاجروں کو ود ہولڈنگ ایجنٹ نہیں بننا پڑے گا۔

ایف بی آر کے مطابق 300 مربع فٹ کی دکان میں کاروبار کرنے والا چھوٹا دکاندار تصور کیا جائے گا جن پر 2 فیصد ٹرن اوور ٹیکس لاگو ہوگا۔

علاوہ ازیں ایف بی آر کی جانب سے چھوٹے دکانداروں کو فکسڈ ٹیکس کا آپشن بھی دیا گیا ہے۔

 مسودے کے مطابق چھوٹے دکاندارسال 2019 میں 20 ہزار, 25 ہزار, 35 ہزار اور 40 ہزار کا فکسڈ ٹیکس ادا کرسکتے ہیں۔

مزید برآں بتایا گیا کہ چھوٹے دکاندارسال 2020 میں 25 ہزار, 35 ہزار, 40 ہزار اور 50 ہزار کا فکسڈ ٹیکس ادا کرسکتے ہیں۔


About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google

WordPress Video Lightbox Plugin