fbpx
پاکستان سیاست

نواز شریف کا جیل کا کھانا کھانے سے انکار، مر یم نواز کی بھوک ہڑتال اور عدالت جانے کی دھمکی

مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے ملک کے سابق وزیر اعظم اور والد نواز شریف کو جیل میں گھر کے پکے کھانے کی اجازت نہ دینے پر ‘بھوک ہڑتال’ کی دھمکی دے دی۔

ٹوئٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ ‘جعلی حکومت نے نواز شریف کے گھر کے کھانے پر پابندی عائد کر دی ہے، کھانا لے جانے والا اسٹاف پچھلے 5 گھنٹے سے جیل کے باہر کھڑا ہے۔’

انہوں نے کہا کہ ‘میاں صاحب نے جیل کا کھانا کھانے سے انکار کر دیا ہے، اگر حکومت نے اگلے 24 گھنٹے میں یہ پابندی واپس نہ لی تو میں عدالت سے رجوع کروں گی۔’

مریم نواز کا کہنا تھا کہ ‘عدالت سے بھی مدد نہ ملی تو میں کوٹ لکھپت جیل کے باہر جا کر بیٹھوں گی، بھوک ہڑتال بھی کرنا پڑی تو کروں گی کیونکہ ان ظالموں پر مجھے بھروسہ نہیں ہے، یہ میاں صاحب کے کھانے میں کچھ بھی ملا سکتے ہیں، اس بات کو دھمکی نا سمجھا جائے کیونکہ میں یہ کر گزروں گی۔’

واضح رہے کہ نواز شریف، العزیزیہ اسٹیل ملز کیس میں لاہور کی کوٹ لکھپت جیل میں 7 سال کی سزا کاٹ رہے ہیں۔

وزیر اعلیٰ پنجاب کے ترجمان شہباز گِل نے 2 جولائی کو کہا تھا کہ ‘نواز شریف پر کھانے کی کوئی پابندی نہیں لگائی گئی ہے، بلکہ آج بھی ان کا کھان ان کے گھر سے آیا ہے۔’

انہوں نے کہا کہ ‘پنجاب حکومت نے صرف ڈاکٹروں کا پینل تشکیل دینے کی تجویز دی تھی جو سابق وزیر اعظم کے کھانے کا چارٹ مرتب کرے تاکہ انہیں اس کے مطابق باورچی فراہم کیا جائے۔’

شہباز گل کا کہنا تھا کہ ‘نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان روزانہ ان سے ملاقات کرتے ہیں لیکن اپنی نوکری بچانے کے لیے ہر بار ہر کسی کو سابق وزیر اعظم کی صحت سے متعلق گمراہ کرتے ہیں جو بدقسمتی ہے۔’

ان کا کہنا تھا کہ ‘ڈاکٹر عدنان ماہر امراض قلب نہیں ہیں لیکن اس کے باوجود شریف خاندان پراپیگنڈا کرنے کے لیے ان سے ماہر قلب کی خدمات لے رہا ہے۔’

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google