fbpx
ٹی وی شوبز

پاکستانی ڈرامے اب سعودی عرب میں بھی نشر ہوں گے

گزشتہ 3 سال سے سعودی عرب میں بہت بڑی تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں جس کے تحت وہاں فیشن اور شوبز انڈسٹری کے لیے بھی نئے مواقع پیدا ہوئے ہیں۔

خواتین کوسعودی عرب میں جہاں گزشتہ برس ڈرائیونگ کی اجازت دی گئی تھی  وہیں گزشتہ برس 35 سال بعد وہاں سینما کھولے گئے تھے۔

نہ صرف گزشتہ برس سعودی عرب میں فلموں کو نمائش کی اجازت دی گئی بلکہ پہلی بار خواتین کے فیشن ویک کا بھی اہتمام کیا گیا تھا اور سعودی عرب کی پہلی خاتون اسٹیج اداکارہ بھی سامنے آئی تھیں۔

سعودی عرب میں سینما کھولے جانے کےبعد گزشتہ برس پاکستانی فلم کی بھی نمائش کی گئی تھی، تاہم اب جلد ہی پاکستانی ڈراموں کو بھی سعودی عرب کے مختلف ٹی وی چینلز پر نشر کیے جانے کا امکان ہے۔

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے بتایا کہ پاکستان کی ثقافت 5 ہزار سال پرانی ہے اور پاکستان کے ثقافتی ادارے اور پرفارمنگ آرٹس اکیڈمیز بہت مضبوط ہیں جن کے ذریعے سعودی عرب کی مدد کی جاسکتی ہے۔

نجات مفتاح کو سعودی عرب کی پہلی تھیٹر اداکارہ کا اعزاز حاصل ہے—فوٹو: عرب نیوز

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ پاکستان نےسعودی عرب کی جانب سے بنائی جانے والی اکیڈمیز میں رہنمائی کے لیے اپنے فنکاروں کو بھیجنے کی پیشکش کی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ گزشتہ برس سعودی عرب میں راحت فتح علی خان کا بہت بڑا کنسرٹ ہوا تھا اور آئندہ ماہ اپریل میں ایک اور بہت بڑا میلہ سجنے والا ہے جس میں سعودی میں موجود پاکستانی کمیونٹی کو بہت کچھ دیکھنے کا موقع ملے گا اور متعدد پاکستانی فنکار فن کا مظاہرہ کریں گے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ انہوں نے سعودی عرب کو پاکستانی ڈراموں کی فراہمی کی پیش کش کی ہے اور جلد ہی پاکستانی ڈراموں کو عرب زبان میں ڈب کرکے سعودی عرب کو فراہم کردیے جائیں گے۔

سعودی عرب میں اپریل 2018 میں پہلی بار فیشن ویک کا اہتمام کیا گیا تھا—فوٹو: اے ایف پی

ساتھ ہی انہوں نے بتایا کہ پاکستان نے سعودی ایئرلائنز سے درخواست کی ہے کہ وہ عربی میں ڈب کی گئی پاکستانی فلموں کو طیاروں میں دکھائیں۔

وزیر اطلاعات نے مزید بتایا کہ پاکستان کی شوبز انڈسٹری اس وقت فلموں کا معیار بہتر بنانے میں مصروف ہے اور انہیں امید ہے کہ پاکستان کی فلمیں عالمی سطح پر جگہ بنانے میں کامیاب جائیں گی۔

فواہد چوہدری کا کہنا تھا کہ سعودی عرب کی حکومت نے پاکستانی سرمایہ کاروں کو سعودی عرب میں سینما بنانے کی پیش کش بھی کی ہے اور اس حوالے سے سعودی حکومت پاکستانی سرمایہ کاروں کے ساتھ مکمل تعاون کرنے کو تیار ہے۔

سعودی عرب میں اصلاحات پروگرام کی وجہ سے شوبز و فیشن انڈسٹری میں مواقع بڑھے ہیں—فوٹو: اے ایف پی

پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

ویب ڈیسک

ہمارا ویب ڈیسک پاکستان اور ایشیاء سمیت دُنیا بھر میں رُونما ہونے والے حالات و واقعات پر گہری نظر رکھتا ہے اور آپ کو باخبر رکھنے کے لیے خبروں کا انتخاب کر کے انہیں موزوں پیرائے اور اسلوب میں ڈھال کر آپ کے پیشِ نظر کرتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WordPress Video Lightbox Plugin