پاکستان عدالت

آف شور کمپنیوں پر کارروائی کا سامنا کرنے والے جج نے استعفیٰ دے دیا

لاہور ہائی کورٹ کے جج جسٹس فرخ عرفان نے آف شور کمپنیوں سے متعلق تحقیقات کے باعث استعفیٰ دے دیا۔

جسٹس فرخ عرفان کا نام آف شور کمپنیوں میں آیا تھا اور سپریم جوڈیشل کونسل میں بیرون ملک اثاثوں سے متعلق ریفرنس پر کارروائی چل رہی ہے۔

لاہور ہائی کورٹ کے جج نے اپنا استعفیٰ صدر مملکت عارف علوی کو ارسال کردیا ہے۔

انہوں نے اپنے استعفے میں لکھا کہ 2016 میں سپریم جوڈیشل کونسل میں میرے خلاف بیرون ملک جائیدادیں خریدنے سے متعلق شکایت درج کروائی گئی تھی۔

جسٹس فرخ عرفان نے لکھا کہ یہ شکایت سابق بیوروکریٹ نذر محمد چوہان نے درج کروائی تھی، جنہوں نے 2010 میں بطور جج تعیناتی کے خلاف بھی شکایت درج کی تھی جسے مسترد کیا گیا تھا۔

انہوں نے لکھا کہ میں نے 9 سال جج کے طور پر فرائض سرانجام دیے ہیں اور عرصے میں 29 ہزار افراد مقدمات کے فیصلے سنائے۔

رواں برس جنوری میں چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم جوڈیشل کونسل نے لاہور ہائی کورٹ کے جج جسٹس فرخ عرفان کے خلاف بیرون ملک اثاثوں سے متعلق ریفرنس پر کھلی عدالت میں سماعت کی تھی۔

جسٹس فرخ عرفان کے وکیل حامد خان کا کہنا تھا کہ ’عدالت نے جسٹس فرخ عرفان کے 2011،2012 اور 2010 کے ٹیکس ریٹرن طلب کیے تھے‘۔

جس پر وکیل استغاثہ نے موقف اختیار کیا تھا کہ ’جسٹس فرخ عرفان کے 2010 سے آگے کے ٹیکس ریٹرن ریکارڈ پر موجود ہیں‘۔

وکیل استغاثہ نے کہا تھا کہ ’نوٹس آف شور کمپنی گوشواروں میں ظاہر نہ کرنے پر جاری کیا گیا‘۔

دوران سماعت نمائندہ ایس ای سی پی نے جسٹس فرخ عرفان کی پانچ کمپنیوں کا ریکارڈ بھی پیش کیا تھا۔

چیئرمین جوڈیشل کونسل جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ ’یہ تسلیم شدہ ہے کہ جسٹس فرخ نے کمپنیاں بنائیں اور آف شور کمپنیوں کے ذریعے بیرون ملک جائیداد خریدی گئی‘۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WordPress Video Lightbox Plugin