fbpx
پاکستان حادثہ

بلوچستان: لینڈ سلائیڈنگ کے باعث 2 کان کن جاں بحق

صوبہ بلوچستان کے ضلع دکی میں لینڈ سلائیڈنگ کے باعث 2 کان کن جاں بحق ہوگئے۔

لیویز ذرائع کے مطابق کان کن گہری کان میں کھدائی میں مصروف تھے کہ لینڈ سلائیڈنگ کا واقعہ پیش آیا۔

لیویز کے مطابق واقعے میں کان کن موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے۔

بعد ازاں ریسیکو اہلکاروں نے لاشوں کو نکال کر دکی کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹرز ہسپتال منتقل کیا۔

واقعے میں جاں بحق ہونے والے کان کنوں کا تعلق افغانستان سے بتایا جاتا ہے، جو گزشتہ کچھ سالوں سے ضلع دکی میں کان کنی کے پیشے سے وابستہ تھے۔

پاکستان مائینس لیبر ایسوسی ایشن کے رہنما بخت نواب کا کہنا تھا کہ کان کنوں کے تحفظ کے لیے اقدامات نہیں کیے جارہے اور کان کن اپنی جان کی قیمت پر کوئلہ نکال رہے ہیں۔

خیال رہے کہ یکم جنوری 2019 سے اب تک دکی میں 13 کان کن جاں بحق ہوچکے ہیں۔

اس سے قبل دکی کی ایک کان میں گیس کا دھماکا ہوا تھا جس کے نتیجے میں 6 کان کن جاں بحق ہوگئے تھے۔

واضح رہے کہ بلوچستان سے یومیہ 20 ہزار ٹن سے زائد کوئلہ نکالا جاتا ہے، جہاں کان کے مالکان یہ دعویٰ کرتے ہیں کہ وہ کان کنوں کے تحفظ کے لیے بلوچستان حکومت کو ٹیکس کی مد میں رقم کی ادائیگی کررہے ہیں۔

کان کے مالک فتح شاہ عارف نے میڈیا کو بتایا کہ ‘ہم ہر کان کن کے بدلے میں حکومت کو 120 روپے کا سیفٹی ٹیکس ادا کررہے ہیں’۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ کان کے مالکان کے بجائے حکومت کان کنوں کے تحفظ کے لیے اقدامات کرے۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google

WordPress Video Lightbox Plugin