fbpx
پاکستان عدالت

اے ڈی خواجہ کیس سے پہلے پولیس اصلاحات پر توجہ نہیں دی گئی، پولیس کو غیرسیاسی اور عوام دوست بنانا چاہتے ہیں،چیف جسٹس

چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار کا کہنا ہے ہ نظام انصاف کسی بھی معاشرے میں امن کی ضمانت ہوتا ہے، اس کے لیے ابھی بہت کچھ کرناباقی ہے۔

اسلام آباد میں پولیس ریفارمز کمیٹی کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ پولیس اصلاحات پر زیادہ اقدامات نہیں کرسکے۔

انہوں نےکہا کہ اے ڈی خواجہ کیس سے پہلے پولیس اصلاحات پر توجہ نہیں دی گئی، اس حوالے سے کیس سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ہم پولیس کو غیرسیاسی اور عوام دوست بنانا چاہتے ہیں، قیام امن اور قانون کی عملداری میں پولیس کا کردار اہم ہے۔

انہوں نے کہا کہ مجھ سے کسی نے پوچھا کہ ڈی پی او پاکپتن کے معاملے پر نوٹس کیوں لیا اس کی وجہ صرف یہ تھی کہ ڈی پی او نے ایک شہری کو وضاحت کیوں دی۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ پاکستان عدلیہ نے عوام کا اعتماد حاصل کیا ہے،پاکستان کے عوام تبدیلی اور قانون کی بالادستی چاہتے ہیں.

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے جتنے بھی اقدامات اٹھائے وہ حدود سے متجاوز نہیں تھے، قانون کے دائرے میں رہ کر انتظامیہ کو ہدایات دیں۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google

WordPress Video Lightbox Plugin