fbpx
پاکستان عدالت

العزیزیہ ریفرنس اختتام کے قریب، خواجہ حارث کے حتمی دلائل مکمل

العزیزیہ سٹیل ریفرنس میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے وکیل نے حتمی دلائل مکمل کر لئے، جمعراتکو نیب ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل کے جواب الجواب کے بعد کیس کا فیصلہ محفوظ کئے جانے کا امکان ہے۔

خواجہ حارث نے حتمی دلائل میں کہا کہ استغاثہ کا کیس ہے کہ نواز شریف العزیزیہ سٹیل کے اصل مالک ہیں لیکن اس بارے میں کوئی ثبوت پیش نہیں، کیا گیا کہ الدار آڈٹ رپورٹ حسین نواز کی پیش کردہ دستاویز ہے، اس کو نواز شریف کیخلاف بطور ثبوت پیش نہیں کیا جا سکتا، طارق شفیع کا بیان حلفی اگر نواز شریف خلاف بطور ثبوت پیش کیا جاتا ہے تو مجھے ان پر جرح کا موقع ملنا چاہیے تھا۔

جج ارشد ملک نے ریمارکس دیئے کہ حسن اور حسین نواز پیش ہو جاتے تو نیب کا کام کم رہ جاتا، پھر صرف نواز شریف سے کڑیاں ملانا ہوتیں۔ خواجہ حارث کے دلائل مکمل ہونے پر ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نیب نے جواب الجواب جمع کرانے کی استدعا کی جسے عدالت نے منظور کر لیا۔ خواجہ حارث جمعہ کو فلیگ شپ ریفرنس میں حتمی دلائل کا آغاز کریں گے۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WordPress Video Lightbox Plugin