پاکستان طرز زندگی

لاہور میں کچرے کی بھر مار، صفائی ٹیکس کے نفاذ کا فیصلہ

لاہور:  رہائشی علاقوں میں 86 روپے سے 300 روپے فی مرلہ تک ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔

 کمرشل مارکیٹوں کو بھی مختلف کیٹیگریز میں تقسیم کیا گیا ہے۔ ایل ڈبلیو ایم سی نے سفارشات تیار کر کے منظوری کے لیے بھیج دی گئی ہیں۔ صفائی ٹیکس سے ایل ڈبلیو ایم سی کو 1 ارب 28 کروڑ روپے ماہانہ آمدنی ہو گی۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم خان نے ایک بیان میں کہا تھا کہ کوڑا اٹھانے پر ماہانہ ڈیڑھ ارب روپے خرچ آتا ہے، لاہور کا کوڑا اٹھانے پر سالانہ 20 ارب روپے خرچ نہیں کر سکتے، گھروں سے کوڑا اٹھوانے کیلئے شہریوں کو پیسے دینے ہونگے۔

انہوں نے بتایا کہ بلدیاتی مسودہ بل آئندہ سال پیش کیا جائے گا جس میں ماڈل اور پسماندہ علاقوں کو مد نظر رکھتے ہوئے ٹیکس لگایا جائے گا۔ عبدالعلیم خان نے کہا کہ شہر کی صفائی کی نگران کمپنی چلانے کیلئے صفائی ٹیکس ضروری ہے اور یہ فیس بھی کنٹریکٹرز خود صارف سے وصول کرینگے۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

Tags

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.