دنیا سیاست

کرتارپور کا 1947ء میں پاکستان کو ملنا بہت بڑی غلطی تھی، نریندر مودی

 بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کو 70 برس بعد کرتارپور کی یاد ستانے لگی، گاندھی اور نہرو کو کوسنے لگے، انہوں نے کہا ہے کہ اس وقت کے کانگریسی رہنماؤں نے کرسی کی خاطر بابا گرو نانک کی جنم بھومی کو پاکستان کے حوالے کر دیا۔

راجستھان میں تقریر کے دوران بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے کہا کہ بابا گورونانک دیو جی کی اہمیت کا کانگریس کو اندازا ہی نہیں تھا، 1947ء میں کانگریس کو حکومت سنبھالنے کی بہت جلدی تھی اور سکھ برادری کے جذبات کی کوئی پراہ نہیں تھی، اسی لیے کرتار پور پاکستان کو دے دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ آزادی کے وقت کانگریسی رہنماؤں کو حکومت میں آنے کی جلدی تھی، اس لیے تین کلومیٹر دور کرتارپور پاکستان کے حوالے کر دیا۔

بھارتی وزیراعظم نے اپنے منہ میاں مٹھو بنتے ہوئے کرتارپور راہداری کھولنے کا کریڈٹ بھی لینے کی کوشش کی اور کہا کہ کانگریس کی 70سالہ غلطیوں کو سدھارنا ان کی ہی قسمت میں لکھا تھا۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.