fbpx
پاکستان کرائم سٹوری

ڈاکٹر شاہد مسعود اڈیالہ جیل کے نئے مہمان

اسلام آباد: پی ٹی وی بدعنوانی کیس میں گرفتار ادارے کے سابق مینجنگ ڈائریکٹر (ایم ڈی) اور معروف اینکر ڈاکٹر شاہد مسعود کو عدالت نے جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھجوانے کا حکم دے دیا۔

وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے 5 روزہ جسمانی ریمانڈ مکمل ہونے پر ملزم شاہد مسعود کو جج انعام اللہ کے روبرو پیش کیا۔

اس موقع پر ایف آئی اے کی جانب سے سابق ایم ڈی پی ٹی وی کے مزید جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی تھی جسے عدالت نے مسترد کردیا۔

عدالت نے ڈاکٹر شاہد مسعود کو جوڈیشل ریمانڈ پر اڈیالہ جیل بھیجنے کا حکم دے دیا۔

خیال رہے کہ شاہد مسعود پر کیٹرنگ اور دیگوں کا کاروبار کرنے والی کمپنی کے ساتھ کرکٹ میچز کے نشریاتی حقوق کے معاہدے کی منظوری دینے کا الزام ہے۔

24 نومبر 2018 کو اسلام آباد کی مقامی عدالت نے پی ٹی وی بدعنوانی کیس میں گرفتار ادارے کے سابق ایم ڈی اور معروف اینکر ڈاکٹر شاہد مسعود کو 5 روزہ جسمانی ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کیا گیا تھا۔

ہفتہ وار تعطیل کے باعث ڈاکٹر شاہد مسعود کو ایف آئی اے کی عدالت کے بجائے اسلام آباد کی مقامی عدالت میں پیش کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ 23 نومبر کو ایف آئی اے نے پی ٹی وی بدعنوانی کیس میں ادارے کے سابق ایم ڈی ڈاکٹر شاہد مسعود کو عبوری ضمانت مسترد ہونے پر گرفتار کیا تھا۔

اس سے قبل 25 اکتوبر کو اسلام آباد کی مقامی عدالت نے سینئر صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود کو گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیا تھا، تاہم ایف آئی اے کی جانب سے اس وقت ان کی گرفتاری کی کوشش کی گئی تھی لیکن کامیابی نہیں ملی تھی۔

شاہد مسعود پر الزامات

ڈاکٹر شاہد مسعود پر بطور ایم ڈی پی ٹی وی مبینہ طور پر 3 کروڑ 80 لاکھ روپے خوربرد کا الزام ہے۔

شاہد مسعود پر الزام ہے کہ انہوں نے ایم ڈی پی ٹی وی کے عہدے پر فائز رہتے ہوئے پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے میڈیا رائٹس حاصل کرنے کے لیے جعلی کمپنی سے معاہدہ کیا تھا، جس سے پی ٹی وی کو کروڑوں روپے کا نقصان اٹھانا پڑا تھا۔

ایف آئی اے کے مطابق شاہد مسعود نے کرکٹ میچز دکھانے کے لیے کیٹرنگ کا بزنس کرنے والی کمپنی سے معاہدے کی منظوری دی اور اس مد میں جعلی کمپنی کو 3 کروڑ 70 لاکھ روپے کی ادائیگی کی گئی۔

پی ٹی وی کے وکیل نے بتایا کہ کیس میں 2 شریک ملزمان کاشف ربانی اور روشن مصطفی اب تک مجموعی طور پر 2 کروڑ 9 لاکھ روپے واپس کر چکے ہیں۔

شاہد مسعود کے خلاف مبینہ طور پر 3 کروڑ 80 لاکھ روپے کے الزام پر رواں سال جون میں اسلام آباد کی مقامی عدالت نے ان کے نا قابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے تھے۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WordPress Video Lightbox Plugin