fbpx
پاکستان تازہ خبر

بھارتی میڈیا کی طرف سے دہشت گرد قرار دیئے گئے پاکستانی طالبعموں نے میڈیا پر آ کر بھارتی شو فلاپ کر دیا

 جامعہ اسلامیہ امدادیہ کے طلبہ کا میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ وہ گزشتہ دنوں رائے ونڈ اجتماع پر گئے تھے اور گنڈا سنگھ بارڈر کے دورے کے دوران یہ تصویر کھنچوائی۔

پاکستانی مدرسے کے طلبہ کو دہشتگرد قرار دینے کا بھارت کا گھٹیا اور فضول ڈرامہ بری طرح سے فلاپ ہو گیا ہے، پاکستانی مدرسے کے طلبہ نے میڈیا کے سامنے آ کر بھارتی پروپگینڈے کا بھانڈا پھوڑ دیا ہے۔

فیصل آباد کے مدرسہ جامعہ امدادیہ کے طلبہ طیب اور ندیم نے میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ وہ گزشتہ دنوں رائے ونڈ تبلیغی اجتماع میں شرکت کیلئے گئے تھے اور اسی دوران انہوں نے گنڈا سنگھ بارڈر کا دورہ بھی کیا۔

دونوں طلبہ نے بتایا کہ میڈیا پر زیر گردش تصویر اسی موقع کی ہے جسے پتہ نہیں کس نے سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دیا جس سے بھارت کو پاکستان کیخلاف جھوٹا ڈرامہ کرنے کا موقع ملا۔ طیب اور ندیم کا ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہنا تھا کہ دشمن ڈرتا ہے تو ڈرنے دیں۔

انڈیا کے جھوٹے پروپیگنڈے کے حوالہ سے جامعہ اسلامیہ امدادیہ کے معلمین کا ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ رائیونڈ تبلیغی اجتماع کے بعد طلبہ نے تصاویر بنائیں جسے انڈین میڈیا نے پاکستان کو بدنام کرنے کی کوشش میں ایشو بنا دیا۔

مدرسے کے معلمین کا کہنا تھا کہ بھارتی میڈیا نے طالبعلموں کے دہلی میں داخل ہونے کا دعویٰ کیا لیکن حقیقت دونوں طالبعلم تو یہاں مدرسہ میں زیر تعلیم ہیں۔

مدرسہ جامعہ امدادیہ کے مہتمم مفتی زاہد کا میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ طیب نامہ طالبعلم درس نظامی کے پانچویں سال جبکہ ندیم درس نظامی کے ساتویں سال میں زیر تعلیم ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دونوں طالب علم چند روز قبل رائیونڈ میں ہونے والے تبلیغی اجتماع پر گئے اور وہیں سے گنڈا سنگھ بارڈر پر پریڈ دیکھنے چلے گئے اور تصویریں بنوائیں، سوشل میڈیا پر تصویر وائرل ہوئی تو بھارتی میڈیا انہی کو لے کر پروپیگنڈہ کرنا شروع ہو گیا۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

WordPress Video Lightbox Plugin