fbpx
پاکستان سیاست نمایاں

پیپلزپارٹی بینظیر بھٹو کے قتل کے 12 سال بعد پہلی مرتبہ لیاقت باغ میں جلسے کے لیے تیار

PPP Punlic Meeting - PAKasia

راولپنڈی — پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی)، 27 دسمبر 2007 کو خودکش حملے اور فائرنگ میں بینظیر بھٹو کے قتل کے بعد پہلی مرتبہ سابق وزیراعظم کی برسی کے موقع پر لیاقت باغ میں جلسے کے لیے تیار ہے۔

اس موقع پر لیاقت باغ جانے والے راستوں اور جلسے کے مقام کو پاکستان پیپلزپارٹی کے پرچموں، ذوالفقار علی بھٹو، بینظیر بھٹو اور بلاول زرداری زرداری کی تصاویر سے سجایا گیا ہے۔

پاکستان پیپلزپارٹی کےچیئرمین بلاول زرداری زرداری لیاقت باغ میں جلسے سے خطاب کریں گے جس میں شرکت کے لیے ملک بھر سے پارٹی کارکنان اور حامی راولپنڈی پہنچ رہے ہیں۔

علاوہ ازیں اندرون سندھ، خیبرپختونخوا، پنجاب، گلگت بلتستان اور آزاد جموں کشمیر سے جلسے کے اکثر شرکا پہلے ہی پہنچ چکے ہیں اور پیپلزپارٹی نے مقامی ہوٹلوں میں ان کے قیام کے انتظامات کیے ہیں۔

جلسے کے موقع پر لیاقت باغ میں 50 ہزار سے زائد کرسیاں لگائی گئیں ہیں، پارک میں اسٹیج اور ساؤنڈ سسٹم کو اسی طریقے سے نصب کیاگیا ہے جب بینظیر بھٹو نے 27 دسمبر، 2007 کو لیاقت باغ میں جلسے سے خطاب کیا تھا۔

گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ کی راولپنڈی بینچ نے ضلعی انتظامیہ کو جلسے کے لیے تمام سہولیات اور سیکیورٹی فراہم کرنے کی ہدایت کی تھی۔

تاہم پیپلزپارٹی نے اپنے طور پر بھی سیکیورٹی کے انتظامات کیے ہیں۔

مزید پڑھیں: بے نظیر بھٹو کی 12ویں برسی پر جلسے کے لیے لیاقت باغ کاانتخاب ہی کیوں؟

سینیٹ میں پاکستان پیپلزپارٹی کی پارلیمانی رہنما شیری رحمٰن نے جلسے کے مقام کا دورہ کیا تھا اور انتظامات کا جائزہ لیا تھا.

انہوں نے لیاقت باغ میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’ 12 سال بعد، پاکستان پیپلزپارٹی یہاں جلسہ کررہی ہے اور یہ اس تاثر کو دور کرنے کی کوشش ہے کہ پارٹی راولپنڈی میں جلسہ نہیں کرسکے گی‘۔

شیری رحمٰن نے کہا کہ ’ بلاول زرداری کے لیے اس مقام کا دورہ کرنا انتہائی دکھ کا لمحہ ہوگا جہاں ان کی والدہ کو شہید کیا گیا، جیالوں کے لیے بھی اس جگہ جمع ہونا اور اس افسوسناک دن کو یاد کرنا مشکل ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کی قیادت میں ملک کے ہر کونے میں بھی سیاسی سرگرمیاں شروع کی جائیں گی۔

پیپلزپارٹی کی رہنما نے کہا کہ جلسے سے ایک روز قبل لیاقت باغ کے اطراف تمام راستے پارٹی کارکنوں سے بھرے ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ’ چلو چلو لیاقت باغ چلو کا نعرہ ملک بھر میں گونج رہا ہے‘۔

شیری رحمٰن نے کہا کہ مہنگائی نے عام آدمی کی زندگی مشکل بنادی ہے، پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) کی حکومت یوٹیلیٹی بلز میں اضافہ کرکے شہریوں کے لیے مشکلات پیدا کررہی ہے۔

پیپلزپارٹی کی رہنما نے کہا کہ ’ 26 دسمبر کو بجلی کے ٹیرف میں اضافہ کیا گیا اور ہم حکومت کی نااہلی کی مخالفت کررہے ہیں‘۔

انہوں نے کہا کہ بلاول زرداری عوام کی پریشانیوں کا خاتمہ کریں گے اور اپنی والدہ کی جانب سے پاکستان کے عوام سے کیے گئے وعدوں کو پورا کریں گے۔

شیری رحمٰن نے کہا کہ ’ پیپلزپارٹی پنجاب میں اور وفاق کی تمام اکائیوں میں سرگرم ہوگی کیونکہ یہ وہ جماعت ہے جو ملک کی بات کرتی ہے‘۔

علاوہ ازیں پیپلزپارٹی کے وومن ونگ اور پیپلز یوتھ آرگنائزیشن نے شہر کے مختلف علاقوں میں ریلیاں نکالیں، فیض آباد سے 200 سے زائد نوجوانوں نے موٹرسائیکلوں پر ریلیاں نکالیں۔

پیپلزپارٹی اسلام آباد کے وومن ونگ نے بھی ریلی کا انعقاد کیا اور عظمیٰ ناصر کی قیادت میں ریلی نکالی، ریلی کا آغاز مری روڈ سے ہوا جو لیاقت باغ کے باہر یادگار پر اختتام پذیر ہوئی۔


اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں


لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی“ کے آپشن یا یہاں کلک کریں