fbpx
پاکستان کرائم سٹوری

کرنسی سمگلنگ کیس: ایان علی اشتہاری قرار، دائمی وارنٹ گرفتاری جاری

راولپنڈی:  راولپنڈی کی کسٹم عدالت نے کرنسی سمگلنگ کیس میں ماڈل گرل ایان علی کو اشتہاری قرار دے دیا۔ ملزمہ کے اثاثہ جات ضبط کرنے اور گواہوں کو بیانات قلمبند کرانے کیلئے 16 مارچ کو پیش ہونے کے احکامات بھی جاری کر دیئے گئے۔

کسٹم عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے کرنسی سمگلنگ کیس کی سماعت کی۔ ملزمہ ایان علی کی مسلسل عدم پیشی پر عدالت نے سخت برہمی کا اظہار کیا۔ ملزمہ کو دو ماہ کا وقت دے چکے مگر وہ پھر بھی نہیں آئیں، بتایا جائے کہ اشتہار ملزمہ کے گھر پر لگایا گیا یا نہیں، ماڈل کے قابل ضمانت اور ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری ہوئے، مسلسل طلبی کے باوجود ملزمہ پیش نہیں ہوئیں۔ ایان علی نے جو ایڈریس دیا وہ کراچی کی نجی سوسائٹی کا ہے۔

عدالت نے کہا سیشن جج کراچی کو خط لکھا جائے کہ ایک مجسٹریٹ تعینات کریں جو ملزمہ کے فلیٹ کو فروخت ہونے سے روکنے کیلئے متعلقہ محکموں کو پابند کرے۔ ملزمہ ایان علی کے دائمی وارنٹ گرفتاری جاری کر کے ماڈل گرل کو اشتہاری قرار دے دیا گیا، ملزمہ کے اثاثہ جات ضبط کرنے کے احکامات بھی جاری کیے گئے ہیں۔ مقدمے کی مزید سماعت 16 مارچ تک ملتوی کر دی گئی۔ عدالت نے تمام گواہوں کو بیانات قلمبند کرنے کیلئے آئندہ سماعت پر طلب کر لیا۔

ماڈل گرل ایان علی کو 14 مارچ 2015 کو بے نظیر انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے 6 لاکھ 6 ہزار 800 امریکی ڈالرز دبئی سمگل کرتے ہوئے گرفتار کیا گیا تھا۔ ایان علی منی لانڈرنگ سکینڈل میں عدالت کے روبرو اپنی بے گناہی ثابت کرنے میں تاحال ناکام رہی ہیں۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google