fbpx
پاکستان کرائم سٹوری

نقیب اللہ محسود قتل کیس :حالات و واقعات اور شواہد کی روشنی میں پولیس مقابلہ خود ساختہ، جھوٹا اور بے بنیاد تھا، انسداد دہشت گردی عدالت

کراچی کی انسداد دہشت گردی عدالت نے نقیب اللہ سمیت 4 افراد کے خلاف پولیس مقابلے کو جعلی قرار دیتے ہوئے انہیں بے گناہ قرار دے دیا۔

عدالت نے مقتولين کے خلاف درج مقدمات بھی ختم کرنے کا حکم دیا۔

کراچی کی انسداد دہشت گردی عدالت (اے ٹی سی) نے جمعرات کو تحقیقاتی رپورٹ کی روشنی میں نقیب اللہ محسود سمیت 4 افراد کے قتل کو ماورائے عدالت قرار دیتے ہوئے ان افراد کے خلاف درج 5 مقدمات ختم کرنے کی رپورٹ منظور کرلی۔

عدالت نے نقیب اللہ محسود کے قتل کی تحقیقات کرنے والی کمیٹی کی رپورٹ پر دیے گئے فیصلے میں رپورٹ کو کا حوالہ دیا کہ نقیب اللہ، صابر، نذر جان، اسحٰق کو داعش اور لشکر جھنگوی کا دہشت گرد قرار دے کر ویران مقام پر قتل کیا گیا۔

اس رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ انکوائری کمیٹی اور تفتیشی افسر نے جائے وقوع کا معائنہ کیا، اس دوران انہیں پولٹری فارم میں نہ ہی گولیوں کے نشان ملے جبکہ دستی بم پھٹنے کے بھی کوئی آثار واضح نہیں ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق حالات و واقعات اور شواہد کی روشنی میں یہ مقابلہ خودساختہ، جھوٹا اور بے بنیاد تھا، راؤ انوار اور اس کے ساتھی جائے وقوع پر موجود تھے جبکہ نقیب اللہ اور چاروں افراد کو کمرے میں قتل کرنے کے بعد اسلحہ اور گولیاں ڈالی گئیں۔

نقيب اللہ قتل کيس ميں مدعی کے وکيل صلاح الدين پنہور کا کہنا تھا کہ رائو انوار کے سب دعوے جھوٹے ثابت ہوئے۔

صلاح الدين کا کہنا تھا پوليس نے نقيب اللہ سميت ديگر مقتولين کے خلاف دہشتگردی اور اسلحہ بر آمدگی کے پانچ مقدمات درج کیے تھے جو عدالت نے ختم کرنے کا حکم ديا ہے۔

خیال رہے کہ فروری 2018 میں سابق تفتیشی افسر عابد قائم خانی نے نقیب اللہ اور ان کے ساتھیوں کے خلاف درج مقدمات سے متعلق رپورٹ جمع کرائی تھی، جس میں کہا گیا تھا کہ نقیب اور اس کے ساتھیوں کا مقابلہ بالکل جھوٹ تھا۔

تاہم راؤ انوار نے مقابلے کے بعد نقیب اللہ سمیت دیگر کو دہشت گرد قرار دیا تھا اور مقتولین کے خلاف 5 مقدمات درج کیے گئے تھے۔

پولیس نے اس واقعے کی تحقیقات کی تھیں اور رپورٹ عدالت میں جمع کرائی تھی، جس میں ان مقدمات کو ختم کرنے کی منظوری حاصل کی گئی تھی۔


پاک ایشیاء ایک غیر منافع بخش ادارہ ہے۔ ہماری صحافت کو سرکاری اور کارپوریٹ دباؤ سے آزاد رکھنے کے لیے  مالی تعاون کیجیے نیز اس خبر کے حوالے سے اپنی آراء کا اظہار کمنٹس میں کریں اور شیئر کر کے ہماری حوصلہ افزائی کریں

About the author

عدیل رحمان (معاون مُدیر)

عدیل رحمان پاک ایشیاء میں بطور معاون مُدیر کے طور پر اپنی خدمات ادا کر رہے ہیں- یہ پاک ایشیاء کے ابتدائی ساتھیوں میں سے ایک ہیں اور انتہائی جانفشانی سے کام کرتے ہیں اللہ تعالیٰ نے انہیں منفرد تخلیقی صلاحیتوں سے نوازا ہے جس کا اظہار اکثر اُن کی خبروں کی سُرخیوں سے بھی لگایا جا سکتا ہے۔

Add Comment

Click here to post a comment

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.




From Google